کرپشن کیس میں فواد چوہدری کے جسمانی ریمانڈ میں 4 روز کی توسیع کر دی گئی۔

احتساب عدالت نے نیب حکام کو ہدایت کی کہ فواد کو 9 جنوری کو عدالت میں پیش کیا جائے۔

پولیس اہلکار سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری کو 25 جنوری 2023 کو لاہور کی عدالت میں پیش کرنے کے لیے لے جا رہے ہیں۔ — اے ایف پی
  • نیب نے عدالت کو بتایا کہ اسے فواد کے بارے میں بینکنگ ریکارڈ حاصل کرنا ہے۔
  • احتساب عدالت نے اہل خانہ کو سابق وزیر سے ملاقات کی اجازت دے دی۔
  • اینٹی گرافٹ واچ ڈاگ کا کہنا ہے کہ اسے شک ہے کہ فواد نے رشوت لی۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے جمعہ کو قومی احتساب بیورو (نیب) کو جہلم میں ترقیاتی منصوبوں سے متعلق کرپشن کیس میں سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری کے جسمانی ریمانڈ میں مزید 4 دن کی توسیع دے دی۔

اسلام آباد کی احتساب عدالت ون کے جج محمد بشیر نے نیب کی درخواست پر فواد کے جسمانی ریمانڈ میں توسیع کر دی کیونکہ اینٹی گرافٹ واچ ڈاگ کے پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ انہیں ملزم سے متعلق بینکنگ ریکارڈ برآمد کرنا ہے۔

پراسیکیوٹر نے کہا کہ سات بینک اکاؤنٹس کی جانچ پڑتال کے بعد، نیب نے کچھ ٹرانزیکشنز کو “مشتبہ” پایا، انہوں نے مزید کہا کہ انہیں سابق وفاقی وزیر کے “رشوت وصول کرنے” پر شک ہے۔

دونوں جانب سے دلائل سننے کے بعد احتساب عدالت نے فیصلہ سنایا جو بعد ازاں اسی روز سنایا گیا۔

عدالت نے اپنے فیصلے میں نیب کو فواد کے جسمانی ریمانڈ میں 4 روز کی توسیع کرتے ہوئے حکام کو ہدایت کی کہ ملزم کو 9 جنوری کو عدالت میں پیش کیا جائے۔

اس کے علاوہ عدالت نے فواد کی نظر بندی کے دوران اہل خانہ سے ملاقات کی اجازت دینے کی درخواست بھی منظور کرلی۔

واضح رہے کہ نیب نے فواد کو 16 دسمبر کو کرپشن کیس میں حراست میں لیا تھا۔ نیب کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل (ر) نذیر احمد بٹ نے چوہدری کے وارنٹ گرفتاری پر دستخط کیے تھے جس کے بعد انہیں اڈیالہ جیل سے حراست میں لے لیا گیا تھا جہاں وہ فراڈ کیس میں قید تھے۔

20 دسمبر کو انسداد بدعنوانی کے نگراں ادارے نے سابق وفاقی وزیر کا 10 روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کیا۔ ریمانڈ مکمل ہونے پر فواد کو 30 دسمبر کو عدالت میں پیش کیا گیا۔

کارروائی کے دوران نیب پراسیکیوٹر عرفان بھولا نے عدالت کو بتایا کہ پی ٹی آئی کے سابق رہنما زیر تفتیش ہیں اور مبینہ بے ضابطگیوں سے متعلق تفصیلات بتا رہے ہیں۔ بعد ازاں عدالت نے ان کے جسمانی ریمانڈ میں مزید چھ روز کی توسیع کر دی۔

Check Also

پنجاب اسمبلی میں مسلم لیگ ن کے ملک احمد خان سپیکر اور ملک ظہیر ڈپٹی سپیکر منتخب ہو گئے۔

نومنتخب سپیکر نے ڈپٹی سپیکر سے حلف لیا۔ اسمبلی کا اجلاس پیر کی صبح 11 …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *