ٹکٹوں کی تقسیم میں پیپلز پارٹی کے بڑے خاندانوں کو ترجیح دی گئی۔

پیپلز پارٹی کے ہیوی ویٹ خورشید احمد شاہ، ان کے بیٹے اور داماد کو انتخابات کے لیے پارٹی ٹکٹس سے نوازا گیا

پیپلز پارٹی کے جلسہ عام کا ایک منظر۔ X/@MediaCellPPP/فائل

کراچی: پاکستان پیپلز پارٹی-پارلیمینٹیرینز (پی پی پی پی) – جو مسلسل 15 سالوں سے سندھ پر حکومت کر رہی ہے – نے ایک بار پھر 8 فروری کو ہونے والے عام انتخابات کے ٹکٹ دینے میں پارٹی کے بڑے لوگوں کے خاندانوں کو ترجیح دی ہے۔ جیو نیوز اطلاع دی

سندھ میں، پارٹی نے ٹکٹوں کی تقسیم میں میرٹ کو بظاہر نظر انداز کیا، کیونکہ ایک رپورٹ کے مطابق، حیرت انگیز طور پر پانچ بہن بھائی آئندہ عام انتخابات میں پی پی پی کے ٹکٹ پر حصہ لیں گے۔ اس میں مزید کہا گیا ہے کہ پارٹی نے صوبے کے بااثر خاندانوں کے افراد کو ٹکٹ دیے۔

قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں کے لیے پیپلز پارٹی کے ٹکٹ حاصل کرنے والے خوش نصیبوں کی فہرست میں کچھ دلچسپ حقائق سامنے آئے ہیں۔

گھوٹکی میں پی پی پی کے علی گوہر خان مہر این اے 199 سے الیکشن لڑیں گے جبکہ ان کے بھائی علی نواز مہر اور کزن محمد بخش صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر پارٹی کے امیدوار تھے۔

پی پی پی کے ہیوی ویٹ سید خورشید احمد شاہ نے سکھر کے حلقہ این اے 201 سے پارٹی ٹکٹ جیتا اور ان کے بیٹے سید فرخ احمد شاہ اور داماد اویس شاہ کو سندھ اسمبلی کے ٹکٹس دیے گئے۔

پارٹی نے شکارپور کے حلقہ این اے 193 سے شہریار خان مہر کو میدان میں اتارا جب کہ ان کے بھائی عارف خان مہر پی اے کی نشست پر الیکشن لڑیں گے۔

ضلع قمبر شہدادکوٹ میں سب سے زیادہ ٹکٹیں دو خاندانوں مگسی اور چانڈیو کو دی گئیں۔

اسی طرح سابق صدر آصف علی زرداری اور ان کے صاحبزادے بلاول بھٹو بالترتیب این اے 207 (نواب شاہ) اور این اے 196 (لاڑکانہ) سے الیکشن لڑیں گے۔

زرداری کی بہنیں ڈاکٹر عذرا پیچوہو اور فریال تالپور سندھ اسمبلی کی نشستوں پر بالترتیب نواب شاہ اور لاڑکانہ سے الیکشن لڑیں گی، جبکہ ترلپور کے شوہر میر منور علی تالپور میرپورخاص کے حلقہ این اے 212 سے پارٹی کے امیدوار ہیں۔

ضلع مٹیاری سے مخدوم جمیل الزماں قومی اسمبلی کے لیے پارٹی کے امیدوار ہیں، جہاں ان کے بیٹے محبوب زمان اور بھتیجے مخدوم فخر زمان سندھ اسمبلی کی نشستوں پر پارٹی کے ٹکٹ حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے۔

سندھ کے سابق وزیراعلیٰ قائم علی شاہ خیرپور سے الیکشن لڑیں گے جب کہ ان کی صاحبزادی نفیسہ شاہ اور جاوید علی شاہ قومی اسمبلی کی نشستوں پر پارٹی ٹکٹ حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔

پی پی پی پی کے ملک اسد سکندر اور ان کے بیٹے ملک سکندر جامشورو سے بالترتیب قومی اور صوبائی اسمبلی کی نشستوں پر پارٹی کے امیدوار ہوں گے۔

عمرکوٹ سے نواب یوسف تالپور قومی اسمبلی کی نشست کے لیے الیکشن لڑیں گے، ان کے بیٹے تیمور تالپور نے صوبائی اسمبلی کی نشست پر پارٹی ٹکٹ حاصل کیا ہے۔

مذکورہ ضلع میں پارٹی کی تقسیم کا نتیجہ یہ بھی نکلا کہ سید سردار شاہ، ان کے کزن امیر شاہ، پی پی پی پی کے ٹکٹ پر صوبائی اسمبلی کی نشستوں کے لیے الیکشن لڑے، جب کہ سردار کے ایک اور رشتہ دار ضیاء عباس شاہ ٹنڈو الہ یار سے پارٹی کے امیدوار ہیں۔ سندھ اسمبلی کی نشست

ضلع ٹھٹھہ میں پارٹی ٹکٹوں کی تقسیم بھی خاندانی سیاست کی بازگشت ہے کیونکہ شیرازی خاندان سے تعلق رکھنے والے دو بھائی یعنی ایاز شاہ این اے کے لیے الیکشن لڑیں گے جب کہ ان کے چھوٹے بھائی ریاض حسین شاہ اور شاہ حسین شاہ صوبائی کے لیے پارٹی کے امیدوار ہوں گے۔ اسمبلی نشستیں

مزید برآں، ہندو برادری کے دو ارکان بھی پی پی پی پی کے ٹکٹ پر الیکشن لڑیں گے جن میں ڈاکٹر مہیش ملانی اور رام کشوری لال کو بلاول بھٹو کی زیر قیادت پارٹی تھرپارکر اور میرپورخاص سے بالترتیب این اے اور سندھ اسمبلی کی نشستوں پر میدان میں اتارے گی۔

Check Also

پیپلز پارٹی جلد وزیراعلیٰ بلوچستان اور اہم آئینی عہدوں کے ناموں کا اعلان کرے گی، ذرائع

نومنتخب اراکین اسمبلی کے حلف اٹھانے سے قبل پارٹی چیئرمین سینیٹ اور گورنر پنجاب کے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *