قومی اور صوبائی اسمبلیوں کی نشستوں پر 17 ہزار سے زائد امیدواروں کی نظریں

قومی اسمبلی کی نشستوں پر 4 ہزار 807 مرد، 312 خواتین، دو خواجہ سرا الیکشن لڑ رہے ہیں۔

17 جنوری 2024 کو کراچی کی ایک سڑک پر لٹکائے ہوئے سیاسی جماعتوں کے جھنڈوں کے پاس سے مسافر گزر رہے ہیں۔ —AFP
  • 17,816 میں سے 11,785 امیدوار آزاد ہیں۔
  • پنجاب میں کل 6710 امیدوار میدان میں ہیں۔
  • ٹربیونلز نے 1,611 اپیلیں قبول کیں اور 762 کو مسترد کیا۔

اسلام آباد: امیدواروں کو انتخابی نشانات الاٹ کرنے کے بعد، الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے الیکشن لڑنے والے امیدواروں کی فہرست فارم 33 جاری کر دی ہے، جس میں انکشاف کیا گیا ہے کہ کل 17 ہزار 816 امیدوار قومی اسمبلی اور چار صوبائی اسمبلیوں کی نشستوں کے لیے عام انتخابات میں حصہ لیں گے۔ پکڑتا ہے

خبر ای سی پی کے ایک سینئر اہلکار کا حوالہ دیتے ہوئے رپورٹ کیا کہ قانون کے مطابق مختلف وجوہات کی بنا پر امیدواروں کی ایک بڑی تعداد انتخابات سے دستبردار ہو گئی۔

17,816 میں سے 11,785 امیدوار آزاد ہیں جبکہ 6,031 سیاسی جماعتوں سے وابستہ ہیں۔ قومی اسمبلی کی نشستوں پر 4 ہزار 807 مرد، 312 خواتین اور دو خواجہ سرا امیدوار ہیں۔ مزید برآں، صوبائی اسمبلی کی نشستوں کے لیے کل 12,123 مرد، 570 خواتین اور دو خواجہ سرا امیدوار میدان میں اتریں گے۔

اعلیٰ انتخابی ادارے کے اشتراک کردہ اعداد و شمار کے مطابق، قومی اسمبلی کے لیے پارٹی وابستگی رکھنے والے مرد امیدواروں کی تعداد 1,780 ہے، جب کہ پارٹی ٹکٹوں کے ساتھ 93 خواتین ہیں، جس سے ان کی کل تعداد 1,873 ہوگئی ہے۔

تاہم، پارلیمنٹ کے ایوان زیریں کے لیے آزادانہ طور پر انتخاب لڑنے والے امیدواروں کی تعداد تقریباً دوگنی ہے، جن میں 3,027 مرد، 219 خواتین اور دو خواجہ سرا ہیں، جن کی کل تعداد 3,248 ہے۔ چاروں صوبائی اسمبلیوں کی جنرل نشستوں کے لیے انتخابی میدان میں پارٹی وابستگی کے حامل مرد امیدواروں کی تعداد 3,976 ہے اور خواتین کی تعداد 182 ہے جس سے کل تعداد 4,158 ہو گئی ہے۔

اس کے برعکس، بغیر کسی پارٹی وابستگی کے آزادانہ طور پر الیکشن لڑنے والوں کی تعداد 8,537 ہے، جن میں 8,147 مرد امیدوار، 388 خواتین امیدوار اور صوبائی اسمبلیوں میں دو خواجہ سرا امیدوار شامل ہیں۔

فارم 33 کے مطابق، پنجاب میں کل 6,710 امیدوار ہیں، جن میں مرد اور خواتین شامل ہیں، دونوں پارٹیوں سے وابستگی رکھنے والے اور آزاد امیدوار صوبائی اسمبلی کی جنرل نشستوں کے لیے انتخاب لڑ رہے ہیں۔ اسی طرح سندھ میں مجموعی طور پر مرد و خواتین امیدواروں کی تعداد 2878 ہے جن میں پارٹی وابستگی رکھنے والے اور آزاد امیدوار بھی شامل ہیں۔

چاروں صوبوں میں خیبر پختونخوا واحد ہے جہاں دو خواجہ سرا بھی عام نشستوں پر مقابلہ کر رہے ہیں، جبکہ دیگر امیدواروں کی تعداد 1,763 مرد اور 63 خواتین ہیں، جن کی کل تعداد 1,834 ہے۔

اسی طرح بلوچستان میں پارٹی وابستگیوں اور آزاد امیدواروں کی کل 1,273 مرد امیدوار ہیں جن میں 1,233 مرد اور 40 خواتین شامل ہیں۔

اپیلوں سے متعلق اعدادوشمار کے مطابق، کاغذات نامزدگی کی منظوری اور مسترد ہونے کے خلاف اپیلٹ ٹربیونلز میں کل 2,373 اپیلیں دائر کی گئیں۔ 178 کاغذات نامزدگی کی منظوری کے خلاف اور 2195 مسترد ہونے کے خلاف تھے۔ ٹربیونلز نے 1,611 اپیلیں قبول کیں اور کل اپیلوں میں سے 762 کو مسترد کر دیا۔ دوسری جانب الیکشن کمیشن نے کہا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر کا ان کی تصویر والا جعلی واٹس ایپ اکاؤنٹ ملا ہے اور عوام سے گزارش ہے کہ اس اکاؤنٹ سے جعلی پیغامات اور پروپیگنڈے سے دور رہیں۔

Check Also

نواز شریف کی قیادت میں پاکستان اگلے دو سال میں بحرانوں سے نکل چکا ہوتا: ثناء اللہ

مسلم لیگ ن کے رہنما کا کہنا ہے کہ اگر ان کی جماعت سادہ اکثریت …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *