کراچی پاور شو میں، جماعت اسلامی نے 8 فروری کو ‘نتائج تبدیل ہونے’ پر احتجاج کا انتباہ دیا۔

کراچی کو اس کے مالی حقوق مل جائیں تو حکمرانوں کو بھیک کے کٹورے لے کر دنیا بھر کا سفر نہیں کرنا پڑے گا، نعیم

جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمن 28 جنوری 2024 کو کراچی کے باغ جناح میں ایک عوامی جلسے سے خطاب کر رہے ہیں۔ — JI کراچی
  • ایم کیو ایم پی نے کراچی کا مینڈیٹ جاگیرداروں کو بیچ دیا، رہنما جے آئی۔
  • نعیم کا کہنا ہے کہ کراچی پاکستان کو ترقی یافتہ ملک بنا سکتا ہے۔
  • “ہم K-Electric کا فرانزک آڈٹ کریں گے،” وہ مزید کہتے ہیں۔

عام انتخابات کے قریب آتے ہی، جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمان نے اتوار کو دھمکی دی ہے کہ اگر 8 فروری کو “نتائج تبدیل کیے گئے” تو وہ ریٹرننگ افسران (آر اوز) کے دفاتر کا گھیراؤ کریں گے۔

کراچی کے باغ جناح میں پاور شو سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی کراچی نے خبردار کیا:[JI] ڈسٹرکٹ ریٹرننگ آفیسرز (DROs) اور ریٹرننگ آفیسرز (ROs) کے دفاتر کا گھیراؤ کریں گے۔ [election] نتائج 8 فروری کو تبدیل کیے جائیں گے۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ جماعت اسلامی نے گزشتہ سال جون میں کراچی کے میئر کے انتخابات کے نتائج کو مسترد کرتے ہوئے پیپلز پارٹی پر کراچی کا مینڈیٹ چرانے کا الزام عائد کیا تھا۔ جماعت اسلامی نے 86 یونین کونسلیں جیتیں اور پی پی پی کے بعد دوسرے نمبر پر آئی جس نے میٹرو پولس میں بلدیاتی انتخابات میں 93 یوسی جیتیں۔

شہر میں میئر کا انتخاب 15 جون کو ہوا جس میں پیپلز پارٹی کے مرتضیٰ وہاب نے 173 ووٹ حاصل کیے جب کہ جماعت اسلامی کراچی کے سربراہ نے 160 ووٹ حاصل کیے۔ مائشٹھیت نشست کے لیے ہونے والے انتخابات سے قبل، پی ٹی آئی، جس کے پاس 41 نشستیں تھیں، نے جماعت اسلامی کے امیدوار کی حمایت کا اعلان کیا۔

پی پی پی اور ایم کیو ایم پی پر ایک نیا وار کرتے ہوئے جے آئی کے رہنما نے کہا کہ کراچی کا مینڈیٹ کئی بار بیچا گیا۔ ایم کیو ایم پی نے کراچی کا مینڈیٹ جاگیرداروں اور بیروں کو بیچ دیا۔

نعیم نے کہا کہ دونوں جماعتوں نے کراچی کی واحد پاور ڈسٹری بیوشن کمپنی کو معمولی قیمت پر فروخت کیا۔ “ہم K-Electric کا فرانزک آڈٹ کریں گے اور اس کو بے نقاب کریں گے۔ [political] فریقین اس میں شامل ہیں۔ [corrupt practices]”

کراچی کی ترقی کو پورے پاکستان سے جوڑتے ہوئے نعیم نے کہا کہ تمام تر تباہی کے باوجود بندرگاہی شہر ملک کی معیشت کو چلا رہا ہے۔

کراچی پاکستان کو ترقی یافتہ ملک بنا سکتا ہے۔ اگر بندرگاہی شہر کو اس کے جائز مالی حقوق دے دیے جائیں تو حکمرانوں کو بھیک کے کٹورے کے ساتھ دنیا بھر کا سفر نہ کرنا پڑے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے رہنما نے خبردار کیا کہ اگر دو روز میں انٹرمیڈیٹ کے طلباء کے مسائل حل نہ کیے گئے تو وہ دوبارہ وزیر اعلیٰ ہاؤس کے باہر احتجاجی مظاہرہ کریں گے۔

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ بورڈ آف انٹرمیڈیٹ ایجوکیشن کراچی (بی آئی ای کے) نے گزشتہ ہفتے فرسٹ ایئر (پارٹ ون) کے امتحانات کے نتائج کا اعلان کیا تھا جس میں طلبہ کی بڑی تعداد فیل ہوگئی تھی جس سے ان کی گرتی ہوئی کارکردگی پر تشویش پائی جاتی تھی۔

اعداد و شمار کے مطابق 80 فیصد امیدوار آرٹس (ریگولر) میں، 72 فیصد آرٹس (پرائیویٹ) اور 63 فیصد کامرس (پرائیویٹ) گروپس میں فیل ہوئے۔

اس سے قبل اس ماہ جاری کردہ نتائج میں پری میڈیکل میں صرف 36.5% امیدوار، پری انجینئرنگ میں 34.79% اور کمپیوٹر سائنس گروپس میں 38.69% امیدوار کامیاب ہوئے تھے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے عوامی جلسے کو ’’ریفرنڈم‘‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ 8 فروری ’’ڈاکو راج‘‘ کا خاتمہ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ پی پی پی اور ایم کیو ایم پی نے قوم کی کئی دہائیاں خراب کیں اور دعویٰ کیا کہ ان کی مدت دوبارہ کبھی نہیں آئے گی۔

انہوں نے ملک میں بدعنوانی، آسمان چھوتی مہنگائی، غربت اور لاقانونیت کا ذمہ دار سیاسی جماعتوں کو ٹھہرایا، جو گزشتہ 76 سالوں سے اقتدار کے مزے لوٹ رہی تھیں۔

Check Also

پیپلز پارٹی جلد وزیراعلیٰ بلوچستان اور اہم آئینی عہدوں کے ناموں کا اعلان کرے گی، ذرائع

نومنتخب اراکین اسمبلی کے حلف اٹھانے سے قبل پارٹی چیئرمین سینیٹ اور گورنر پنجاب کے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *